HAJI LIAQUAT

My name is Haji Liaquat but most of the people know me as “Tandi Wala Baba”
I was born in Arifwala to a poor family… My father was very poor and Did not afford to raise us well.. Still I studied till 5th class in Arifwala and came to Burewala afterwards where I completed my Matric and did FA from Government College… I was a topper in my class and loved studying…

Back in those days I dreamt of becoming a Solider like my elder brother was but we were poor and I had so many Responsibilties over my shoulders.. I needed to do something quick so that I could feed my parents and my siblings… I had an interest in sports from a young age so I together with my friend decided to open up a sports shop… We rented up a shop and set up the store but tragedy struck and the business went into loss… I was on streets again.. I decided not to give up and started repairing footballs and other sport goods…

I have been doing this for nearly 24 years now and No one can stitch footballs and repair cricket bats better than me! I challenge you to find someone !
Though up and downs are part of life… Life is good Allahumdulillah! I have four children and all of them are studying .. I wish they will be able to build a strong careers for themselves and live a better life…

Burewala has a special place in my heart… I love this city.. I love its people… Ive been here so for Long that It has become my life… No city is better than this in my eyes…

Never loose hope… Always work hard… You will get your reward in one way or another.. Allah is the greatest and the best planner… If things go wrong always know that it is Allahs plan and is best for you… The world is not a bed of roses but you have to strive to find happiness…

میرا نام حاجي لیاقت ہے لیکن اکثر لوگ مجھے “تندی والے بابا” کے نام سے جانتے ہیں۔۔۔۔میں عارفوالا میں ایک غریب خاندان میں پیدا ہوا تھا۔۔۔۔میرے والد بہت غریب تھے اور ہماری اچھی طرح سے پرورش نہیں کر سکے۔۔۔پھر بھی میں نے عارفواالا میں پانچویں کلاس تک تعلیم حاصل کی اور پھر بورےوالہ آ گيا۔۔۔۔اس کے بعد میں میٹرک مکمل کیا اور گورنمنٹ کالج سے ایف اے کی تعليم حاصل کی۔۔۔میں اپنی کلاس میں ٹاپ کرتا اور آگے پڑھنا چاہتا تھا۔۔۔۔

ان دنوں میں میں نے اپنے بڑے بھائی کی طرح فوجی بننے کا خواب دیکھا تھا—-لیکن ہم بہت غریب تھے اور مجھے جلد ہی کام کرنا پٹر گيا تاکہ میں اپنے والدین اور اپنے بھائیوں اور بہنوں کا پيٹ پال سکوں۔۔۔۔۔اور ميرا خواب حقيقت نہ بن پايا— مجھے بچپن سے ہی کھیلوں میں دلچسپی تھی۔۔۔۔ تو ميں نے اپنے دوستوں کے ساتھ مل کر سپورٹس شاپ کھولی۔۔۔۔ہم نے ایک دکان کرایہ پہ لے کر کام شروع کيا ليکن ہمارے کاروبار کو بہت نقصان پہنچا اور کاروبار بند کرنا پٹرا—میں نے اميد نہيں چھوڑی اور فٹ بال اور دیگر کھیلوں کی مرمت کا کام شروع کیا۔۔۔۔۔

میں اب يہ کام تقریبا 24 سال سے کر رہا ہوں اور کوئی بھی فٹ بال اور کرکٹ کے بلوں کی مجھ سے بہتر مرمت نہيں کر سکتا ہے۔۔۔ آپ کو چیلنج کرتا ہوں کہ کوۂی ميرے جيسا فٹ بال اور کرکٹ کے بلوں کی مرمت کرنے والہ ڈھونڈھ کر دکھائيں۔۔۔۔۔ زندگی ميں اترائی چڑھائی تو آتی رہتی ہے۔۔۔۔۔زندگی اچھی چل رہی ہے۔۔۔۔۔ ميرے چار بچے ہيں اور سب تعليم حاصل کر رہے ہيں۔۔۔

بورے والا کے ليے میرے دل میں خاص جگہ ہے۔۔۔۔ مجھے يہ شہر اور يہاں کے لوگ بہت پسند ہيں۔۔۔۔ميری نظر ميں اس شہر سے بہتر کوئی شہر نہيں ہے۔۔۔ کبھی اميد مت چھوڑو اور محنت کرتے رہو اور خدا تمہيں ضرور اجر دے گا۔۔۔۔اللہ سب سے بڑا اور بہترین منصوبہ ساز ہے۔۔۔۔ زندگی گلاب کے پھولوں کا بستر نہیں ہے، انسان کو خد اپنے ليے خوشی ڈھونڈنی پٹرتی ہے۔۔۔۔

Categories: Get Inspired

0 Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

two × 3 =

0